ا

khawab nama khwab main sher parhna dekhna

khawab nama khwab main sher parhna dekhna

khawab nama khwab main sher parhna dekhna

khawab nama khwab main sher parhna dekhna

hazrat ibne sirin ne farmaya k khawab me sher ghazal ya kisi ki madah kehta he daleel he wo behuda baat kahega farmane HAQ TAALA he ( gumrah log shairon ki pervi karte hain) lekin toheed ya neemat ya danai ki bat karta he to pasandeeda he or gunahgaar na hoga

1jis shakhs ne dekha k shairi k zariye kamai kar raha he daleel he ye jhuti gawahi dega

2agar dekhe k wo kisi majlis me kaseeda par raha he daleel he nafaaq ki taraf melaan hoga agar dekhe k us ne sher suna he to daleel he na haq majalis me shirkat karega

3khawab me sher goi se kalaam e batil murad he

4jis shakhs ne khawab me sher sun kar yaad kar liya touski tabeer us sher k mean maana he agar sher pur az hikmat he ya ALLAH ki yaad me to khair ki daleel he baz martba sher ka sunna or yaad kar lena daleel hota he zawaal mansab deen me nuksaan k baaz martba kisi bari jaleel ul kadar sannat gham bad kismati dushmano ki taraf se asmat me bohtaan ki daleel he

5agar khawab me koi fahesh sher kaha maslan kisi insaan ki hajjw ki to daleel he tohmat lagane ki agar wo sher kisi ki madah me he to agar khawab dekhne wali ghani he to faqeer hojega agar sher me zuhaaf ( ilm o arooz ki ek islah ) he ya lahen he wo maozoon nahe to daleel he ye shakhs behuda guftagu karta he apne qaol o faal me kisi baar ki parwah nahe karta shayateen k sath uska gehra taaluk he

اچھا خواب نعمتِ خدا وندی

حضورﷺ نے ارشاد فرمایا ” بشارتوں کے سوا کوئی چیز باقی نہیں رہی ۔ صحابہ نے عرض کیا ےیا رسولاللہ بشارتوں سے کیا مراد ہے آپ نے فرمایا سچا خواب ۔(صحیح بخاری عن ابی ھریرہ) بخاری ومسلم کی متفق علیہ حدیث ہے آنحضرت ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ سچا خواب نبوت کا چھیاسواں حصہ ہے ۔

اس حدیث شریف معلوم ہوا کہ سچا خواب رویائے صالحہ علوم نبوت کا ایک جزو ہے اور علم نبوت باقی ہے گو انبیاءکرام کی آمد کا سلسلہ موقوف ہوچکا دوسرے لفظوں میں سچا خواب علوم نبوی کا عکس ہے۔

خواب کی اقسام

امام محمد بن سیرین ارشاد فرماتے ہیں کہ خواب تین قسم کے ہوتے ہیں ۔

1- مبشرات خداوندی –

2- تخویفِ شیطان) شیطان کے زیرِ اثر ) –

3- حدیثِ نفس یعنی ذہنی اور دماغی خیلات کا عکس –

اس تقسیم سے ظاہر ہوتا ہے کہ خواب کے تمام اقسام صحیح قابلِ تعبیر اوردر خوراعتناء نہیں ہوتے تعبیر اور اعتبار کے لائق وہی خواب ہوتے ہیں جو حق تعالیٰ کی طرف سے بشارت اور اعلام پر مبنی ہوں۔

علم تعبیر کے چھ مشہور امام
-علم تعبیر میں درج ذیل چھ آئمہ کرام کے اقوال کے بطور سند پیش کیا جاتا ہے
حضرت دانیال علیہ اسلام
حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ تعالیٰ علیہ
حضرت امام محمد بن سرین رحمتہ اللہ علیہ
حضرت امام جابر مغربی رضی اللہ تعالیٰ علیہ
حضرت امام ابراہیم کرمانی علیہ رحمتہ اللہ علیہ
حضرت امام اسمعیل بن شوکت رحمتہ اللہ علیہ
تعبیر بیان کرنے کیلئے ضروری علوم
۔علم تفسیرعلم ضرب الامثالعلم حدیثاشعار عربعلم اشتقاق (صرف)نوادرعلم الغاتعلم الفاظ متد اَولہچنانچہ ایسے علماء ہے تعبیر بیان کرنے کے اہل ہیں جو ان علوم کے ماہر اور متقی پرہیزگار ہوں ۔
الوسوم

اترك تعليقاً

لن يتم نشر عنوان بريدك الإلكتروني. الحقول الإلزامية مشار إليها بـ *

شاهد أيضاً

إغلاق
زر الذهاب إلى الأعلى
إغلاق