Khawab Nama Khwab Main Behii Dekhna

Khawab Nama Khwab Main Behii Dekhna

Khawab Nama Khwab Main Behii Dekhna

Khawab Nama Khwab Main Behii Dekhna

Khawab Nama Khwab Main Behii Dekhna

Bahi phall  (frout )hey jis ka takhum ( beej) behi dana hey khwab ke andar behii ki taweel main ustaadane fun ka akhtlaf hey.baz ne farmaya hey ke buzurg or sardar se mile ga jis se kher o manfat payega or naek tareef sune ga.or baz ne farmaya hey ke bahi ka dekhna farzand hey. or baz ne farmaya hey ke bimari hey or jinhon ne eski taweel bimari batai hey es trha kehte hain ke es ka zard rangg bimari ki dalleel hey or jo kehte hain ke safer daraz jismani ranj ke saath hoga in ke dalleel yeh hey ke hazrat jibraiil alie aslam ne hazrat adam alie aslam ko bahisht se nikalate waqt bahi di thi

Khawab Nama Khwab Main Behii Dekhna

or jinhon ne bahi ki taweel farzand se ki hey iski wajah yeh hey ke jab hazrat adam alie aslam duniya main aye to bahi ke khane se ap ki minni  ( sufaid paani )ziyada hoi lihaza es qadr ullad wajood main aai.

Khawab Nama Khwab Main Behii Dekhna

or jin logon ne kaha hey ke buzarg sardar se naek tareef or kher o manfat payega. un ki dalleel yeh hey ke bahi dene wale hazrat jibraiil alie aslam the or us ke lene wale hazrat adam alie aslam the lihaza tareef neek or nafah bhi paya or ustaadon ne har ek khwab ki tabeer yonhi sar sari nahin biyan ki hey

hazrat ibraheem karmani ne farmaya khwab me bahi k maosam me sabz bahi dekhna bete ki tabeer he agar be waqt zard bahi dekhe to bemaari he 

اچھا خواب نعمتِ خدا وندی

حضورﷺ نے ارشاد فرمایا ” بشارتوں کے سوا کوئی چیز باقی نہیں رہی ۔ صحابہ نے عرض کیا ےیا رسولاللہ بشارتوں سے کیا مراد ہے آپ نے فرمایا سچا خواب ۔(صحیح بخاری عن ابی ھریرہ) بخاری ومسلم کی متفق علیہ حدیث ہے آنحضرت ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ سچا خواب نبوت کا چھیاسواں حصہ ہے ۔

اس حدیث شریف معلوم ہوا کہ سچا خواب رویائے صالحہ علوم نبوت کا ایک جزو ہے اور علم نبوت باقی ہے گو انبیاءکرام کی آمد کا سلسلہ موقوف ہوچکا دوسرے لفظوں میں سچا خواب علوم نبوی کا عکس ہے۔

خواب کی اقسام

امام محمد بن سیرین ارشاد فرماتے ہیں کہ خواب تین قسم کے ہوتے ہیں ۔

1- مبشرات خداوندی –

2- تخویفِ شیطان) شیطان کے زیرِ اثر ) –

3- حدیثِ نفس یعنی ذہنی اور دماغی خیلات کا عکس –

اس تقسیم سے ظاہر ہوتا ہے کہ خواب کے تمام اقسام صحیح قابلِ تعبیر اوردر خوراعتناء نہیں ہوتے تعبیر اور اعتبار کے لائق وہی خواب ہوتے ہیں جو حق تعالیٰ کی طرف سے بشارت اور اعلام پر مبنی ہوں۔

علم تعبیر کے چھ مشہور امام
-علم تعبیر میں درج ذیل چھ آئمہ کرام کے اقوال کے بطور سند پیش کیا جاتا ہے
حضرت دانیال علیہ اسلام
حضرت امام جعفر صادق رضی اللہ تعالیٰ علیہ
حضرت امام محمد بن سرین رحمتہ اللہ علیہ
حضرت امام جابر مغربی رضی اللہ تعالیٰ علیہ
حضرت امام ابراہیم کرمانی علیہ رحمتہ اللہ علیہ
حضرت امام اسمعیل بن شوکت رحمتہ اللہ علیہ
تعبیر بیان کرنے کیلئے ضروری علوم
۔علم تفسیرعلم ضرب الامثالعلم حدیثاشعار عربعلم اشتقاق (صرف)نوادرعلم الغاتعلم الفاظ متد اَولہچنانچہ ایسے علماء ہے تعبیر بیان کرنے کے اہل ہیں جو ان علوم کے ماہر اور متقی پرہیزگار ہوں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button